بوجھ

Posted: 2010/01/11 by ymaajed in نظم

بوجھ

یاور ماجد

یہ میں ہو ں
پاتال میں گڑا ہوں
وہ تُو ہے
ہر دم فلک کی جانب رواں دواں ہے

یہ میں ہوں
جس نے تجھے نکھارا
تجھے سنوارا
ترے لئے سب نشیلی راتوں کی نیند چھوڑی
ترے لئے سارے خواب چھوڑے
وہ خواب جن میں
ہزار کرنوں کی روشنی تھی
بہار جن میں رچی بسی تھی
 
یہ میری آنکھیں
یہ زرد آنکھیں!!
یہ آنکھیں جن میں ہزار راتوں کی تیرگی ہے

یہ میں ہوں
تیرے عظیم دولت سرا کو اپنے مہین کندھوں پہ جانے کب سے لئے کھڑا ہوں
یہ میں
جو پاتال میں گڑا ہوں

bojh

(Transliteration)

Yawar Maajed

yeh maiN hooN
paataal meN gaRa hooN
voh tu hai
har dam falak ki jaanab ravaaN davaaN hai
 
yeh maiN hooN
jis ne tujhe nikhara
tujhe saNvaara
tire liye sab nasheeli raatoN ki neeNd chhoRi
tire liye saare KHuaab chhoRe
voh KHuaab jin meN
hazaar kirnoN ki raushni thi
bahaar jin meN rachi basi thi

yeh meri aaNkheN
yeh zard aaNkheN
yeh aaNkheN jin meN
hazaar raatoN ki teergi hai

yeh maiN hooN
tere azeem daulat sara ko apne
maheen kandhoN pe jaane kab se liye khaRa hooN
yeh maiN jo paataal meN gaRa hooN

 

7 people like this.
  • یاور ماجد

    میں ابھی اٹھا تو دیکھا کہ احباب کی ای میلز کا ڈھیر لگا ہوا ہے، کچھ گلوں کے ساتھ کہ ان کا کمنٹ کرنے کا اختیار کیوں چھین لیا گیا اور کچھ حیرت کا اظہار کرتے ہوئے
    فیس بک میں کسی مسئلے کی وجہ سے کوئی دوست بھی اس نظم پر کمنٹ نہیں کر پا رہا۔۔۔ میں… دیکھ رہا ہوں، شاید نوٹس وغیرہ کی کسی سیٹنگ کا مسئلہ ہو،
    اگر یہ مسئلہ نہ سلجھ سکا تو نوٹ کو ڈیلیٹ کر کے دوبارہ ڈال دوں گا۔ بدمزگی کے لئے بہت معذرت خواہ ہوںSee More
    January 11 at 6:08am
  • Raza Siddiqi boht achay

    January 11 at 6:17am
  • یاور ماجد سب احباب کو دوبارہ ٹیگ کر دیا ہے، بدمزگی کے لئے ایک بار پھر معافی کا طلبگار۔

    January 11 at 6:17am
  • Irfan Sattar یاور بہت اچھی نظم ہے۔ اس کی سب سے بڑی خوبی یہ ہے کہ اس کی لفظیات اور آہنگ خیال کےساتھ پوری طرح انصاف کررہے ہیں۔ اچھا خیال یا اچھا کرافٹ اکثر دیکھنے کو ملتا ہے، مگر جب دونوں یکجا ہوں تو ایک اچھی نظم بن پاتی ہے، جس کی بہت عمدہ مثال آپ کی یہ نظم ہے۔ نظم کا اختتام بہت پُراثر انداز میں کیا ہے، اور ابتدا سے انتہا تک کا دائرہ بہت اچھے طریقے سے مکمل بنا ہے۔ خوش رہیئے۔ شریک کرنے کا شکریہ۔

    January 11 at 6:23am
  • Shoaib Afzaal yawar may nay ap ki nazm subah parhi thee phir waqtan fawaqtan 3 ya 4 martaba parhi koi bhi takhliq apnay khaliq kay batin taq janay ka rasta hoti hay aur yaha ap ki nazm ki aafaqiyat nay bohat mutasir kia…xindagi ki yeh falsfana tozeeh bohat purasr hay bohat si dad qabul kejeye.

    January 11 at 6:58am
  • Azm Behzad

    برادرم بہت اچھی نظم ہے۔اس نظم کا ظہور
    تعلقات کی کشاکش سے ہوتا ہے ، جب خلوص کی میزان
    برابر نہ رہے اور کوئ ایک پلڑا جھکتا ہی چلا جائے تو اس طرح کا
    اظہار تشکیل پا جاتا ہے۔آپ نے فرمایا کہ یہ ایک پرانی نظم ہے
    ظاہر ہے کہ یہ اس جذباتی عمر کا بیان ہ…ے جب کسی کے
    لیئے بے لوث ہونا فطری عمل ہوتا ہے اور نفع و نقصان کے
    لفظ لغت میں جگہ نہیں پاتے۔مجھے خوشی ہے کہ آپ نے
    اہل_محبت کے اس مشترک تجربے کو بہت خوبصورتی
    سے شعریت میں منتقل کر دیا۔اللہ بہت خوشیاں دے۔See More
    January 11 at 7:00am
  • یاور ماجد

    بہت شکریہ رضا صدیقی صاحب، عرفان صاحب ، شعیب صاحب اور عزم صاحب۔
    عزم بھائی، یہ نظم سن ۲۰۰۰ کی ہے، ان دنوں زندگی کے سفر نے ایک نیا موڑ لیا تھا اپنے اندر کا شاعر مجھے مرتے ہوئے نظر آیا، پھر ایک دو سالوں کے اندر اندر رائیٹرز بلاک کی بیماری نے آ… لیا اور اگلے کئی سال تک کچھ لکھ ہی نہیں سکا، یہ نظم گویا ایک شاعر کی مرنے سے پہلے کی آخری ہچکی سی تھی۔
    آپ کی توجہ کا ممنون ہوںSee More
    January 11 at 7:06am
  • Jamshed Masroor Nice

    January 11 at 7:22am
  • Zahid Ahmed khoobsurat

    January 11 at 7:26am
  • Kashif Haider Buhat umda nazm hai yaqeen karain buhat lutf aaya iss koo parh kar

    January 11 at 7:38am
  • Masood Quazi زرد آنکھوں کی اسطلاحی ترکیب معنی خیز ھے
    منجملہ عمدہ شعری تخلیق ھے

    January 11 at 8:08am
  • Nasir Ali

    میں ہوں
    تیرے عظیم دولت سرا کو اپنے مہین کندھوں پہ جانے کب سے لئے کھڑا ہوں
    یہ میں
    جو پاتال میں گڑا ہوں
    یاور بھائی ، بہت لطف دیا ہے آپ کی اس نظم نے ، آج تو کمال کا دن ہے بہت اچھی غزلوں کے ساتھ ساتھ بہت اچھی نظمیں ملی ہیں پڑھنے کو ۔ رفیع ،علی زریو…ن، علی ارمان ، کامران اور باقی یاور رہ گیا تھا وہ بھی اتنی اچھی نظم سمیت اپنی موجودگی کا اعلان کر رہا ہے ۔See More
    January 11 at 8:10am
  • Jameelur Rahman nazm ka majmui taassar achcha hai.purani shi magar aap ki to hai.

    January 11 at 8:36am
  • یاور ماجد شکریہ جلیل صاحب، آپ کی شکایت بجا، میں نے نوٹ ایڈٹ کر کے لفظ پرانی نکال دیا ہے۔ نظم پڑھنے پر اور تبصرہ کرنے پر آپ کا بھی اور باقی احباب کا بھی بےحد شکریہ

    January 11 at 8:40am
  • Majeed Akhtar بھائی کل میں اپنا کمنٹ پوسٹ نہ کرپایا اور سمجھتا رہا کہ میں کوئی غلطی کر رہا ہوں – نظم مجھے تو بہت پسند آئی ۔ اختتام بھی پر اثر ہے ۔ نظم میں بڑی روانی ہے خیالات کی رو کہیں جھٹکا نہیں کھاتی ۔ مبارکباد ، ڈھیروں داد اور دعائیں ۔

    January 11 at 10:04am
  • Ahmad Safi یاور میں اس نظم سے بہت متاثر ہؤا ہوں۔
    !لکھتے رہو

    January 11 at 10:37am
  • Qayyum Khosa Bahut Umda Yawar Majid Sahib. Shareek Karnay Ka Shukriyah. Khush Rahain.

    January 11 at 10:46am
  • Faiz Alam Babar kia hi umda aur taseer sy bharpoor nazm hy bhot si daad yawar bhaii

    January 11 at 1:35pm
  • Ali Zubair

    یاور ماجد عجیب نظم ہے،اس نظم کا فلسفہ ”بنیاد” ہے۔ یہ نظم اتنی جلدی اپنے معنی قاری پر نہیں کھولتی۔مگر جب کھولتی ہے تو اپنے خالق کے لیے اپنے قاری سے بے ساختہ کلمئہ تحسین برآمد کرواتی ہے،کمال نظم ہے یار کمال نظم ہے، اس نظم کو سمجھنے کے قاری …کے لیے لازم ہے کہ وہ سیاق و سباق پر غور کرے۔
    ایک عام رہائشی مکان کی بنیاد سے اس نظم کا خمیر اٹھا ہے۔اس نطم میں انسان کا وہ عظیم دعوا موجود ہے کہ جس میں وہ خود کو کائنات کا مرکز و محور گردانتا ہے۔ یاور بہت اچھی نظم ہےSee More
    January 11 at 2:14pm
  • Zafar Khan یاور عمدہ نظم ہے۔سب الفاظ نظم کے عمومی مفہوم کا حق ادا کرتے نظر آتے ہیں لیکن مجھے اسکے آخر میں یہ احساس ہوا جیسے شاید آپ ابھی اور کچھ کہنا چاہتے ہوں۔جیسے آپ اس تعلق کو جس کا ذکر اس نظم میں ہے اس کی مزید تفصیل بیان کرنا چاہتے ہیں۔ میں نہیں جانتا کہ میرا یہ خیال انفرادی ہے یا کسی اور کا بھی اس طرف دھیان گیا۔

    January 11 at 2:59pm
  • یاور ماجد بہت شکریہ مجید صاحب، صفی صاحب، قیوم صاحب، فیض صاحب، علی زبیر صاحب اور ظفر صاحب۔

    January 11 at 3:34pm
  • Gulnaz Kausar ظفر میں اتفاق کروں گی آپ سے یہ ایک تعلق ہی ہے ۔۔۔۔ ایسا تعلق جس میں ایک ہاتھ بس دینے ہی دینے والا ہے ۔۔۔۔۔ اور مزید تفصیل بیان نہ کرنا ہی اس کی اصل خوبصورتی ہے ۔۔۔۔ اب تم اسے باپ بیٹے کے تعلق سے شروع کر کے کہیں بھی لے جاءو ۔۔۔۔۔

    January 11 at 4:00pm
  • Gulnaz Kausar یہ ہو سکتا ہے کہ کچھ لوگ جو نظموں میں اور طرح کے لطف تلاشتے ہیں اس نظم کے ملائم اثر سے صاف بچ نکلیں لیکن اکثریت اس مغموم کیفیت میں ایک لحظہ کو گرفتار ضرور ہوگی۔۔۔۔ بات تو عام ہی ہے یعنی جیسے پیڑ اپنی ساری توانائ بیل کو بخش دے اور خود سوکھ کر سیاہ پڑجائے ۔۔۔۔ مگر جو منظر تراشا گیا ہے وہ اس عام بات کو خاص بنانے مین کامیاب رہا ہے۔۔۔۔۔ بہت اچھے یاور۔۔۔ عمدہ نظم ہے۔۔۔۔

    January 11 at 4:06pm
  • Zafar Khan میں گل کی بات سے متفق ہوں۔

    January 11 at 4:18pm
  • Kamran Haider Bukhari Yawar bhai, iss nazm ki jitni ta’reef ki jaye kam hai… Aap ki nazm mein assar iss liye hai kyonkay mein jaanta hoon kay yeh alfaaz jo aik ro mein beh rahay hain, aik dard rakhnay waalay dil se niklay hain… Aap jo mehsoos kartay hain wohi likhtay hain… Aur koi maanay ya na maanay yeh aawaaz dil ko ik baar jhunjhulaati zaror hai…

    January 12 at 1:35am
  • Jawad Sheikh wah. bohot khoobsurat nazm hai yawar sahib. bohot achha laga parh ker. bohot mukammal..!!! congrats.

    January 12 at 4:17am
  • Zakir Hussain Ziai Bahut Achhee Nazzm Hey Yawar Bhaii.. Salamat Rahiye.

    January 12 at 4:54am
  • Faizan Abrar

    یہ میں ہوں
    تیرے عظیم دولت سرا کو اپنے مہین کندھوں پہ جانے کب سے لئے کھڑا ہوں
    یہ میں
    جو پاتال میں گڑا ہوں

    …یاور بھائی بہت عمدہ نظم کہی ہے۔۔۔ ہر سطر اپنی روانی اور معانی کے لحاظ سے لطف دے رہی ہے۔۔۔ خاص کر نظم کا آخری حصہ اپنے الفاظ سے ہٹ کر اپنے اندر جو انداز اور معانی لئے ہے وہ کمال ہے۔۔۔ بہت پسند آئی آپ کی یہ نظم۔See More

    January 12 at 5:58am
  • یاور ماجد شکریہ ظفر صاحب، گلناز جی، کامران صاحب، جواد صاحب، ذاکر صاحب اور فیضان بھائی۔ اپنی سی کوشش میں لگا رہتا ہوں دل کا حال سنانے، اگر ایسا ہی کسی اور پر بھی بیتا ہو اور وہ بھی ایسے احساسات کو اسی شدت سے محسوس کر لے اور اس سے محظوظ ہو جائے تو یہی میرا انعام ہے۔

    January 12 at 7:00am
  • اعجاز عبید اچھی نظم ہپے یاور۔ الفاظ کا صحیح انتخاب اور رواں دواں نظم۔

    January 12 at 11:55am
  • Iqbal Khawar یاور اپنے تاثر اور ٹریٹ منٹ میں یہ ایک مکمل اور بھرپو ر نظم ہے۔ داد قبول کیجے

    January 12 at 12:48pm
  • Amjad Shehzad yawar bhai……buht aala nazm hai. Asl mein mere nazdeek kisi bhi fun para ki aik khoobi yeh bhi hai k har qari us ko apni fehm, mizaj, zehn aur maarooz k mutabiq maani pehna ker lutf utha sakta ho. Yeh nazm bhi aisi hi hai. Khishi hoi k aap ghazal k sath sath nazm bhi usi khoobi sa kehte hain.

    January 13 at 12:48am
  • یاور ماجد اعجاز صاحب، ہمیشہ کی طرح آپ کی توجہ بہت سرشار کر دیتی ہے، خدا آپ کو خوش رکھے اور صحت اور لمبی عمر عطا فرمائے۔
    اقبال خاور صاحب، بہت ممنون ہوں داد کا
    امجد صاحب، آپ کا انتظار تھا، نظم پڑھنے کا اور رائے دینے کا بہت شکریہ

    January 13 at 6:01am
  • Fehmida Ishtiaq Bohat khobsurat nazm hay… Daad kabool kijiye

    January 13 at 11:39am
  • Mansoor Nooruddin Nice expression

    January 13 at 2:33pm
  • Mohammad Naeem bohut umda nazm hai.
    khush rahiye.

    January 14 at 6:12am
تبصرے

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s