اُتر گیا مرے کندھوں سے دو جہان کا وزن

Posted: 2009/10/23 by admin in اردو شاعری, غزل

اتار پھینکا جو میں نے انا کا، آن کا وزن
اُتر گیا مرے کندھوں سے دو جہان کا وزن
 
بہت ہے ثقلِ زمیں اور میرے پر نازک
سنبھال پائیں گے کیسے مری اُڑان کا وزن
 
گزاری عمر یونہی شک کی دُھول میں دب کر
پنپ نہ پایا یقیں اِتنا تھا گُمان کا وزن
 
میں آج ہوں زدِ طوفاں، گھرا ہوں بیچ بھنور
اور اُس پہ توڑے مری کشتی بادبان کا وزن
 
گھُٹن سے کیسے نہ برسیں، زمین پر بادل
اُٹھائے بیٹھے ہیں اِتنا جو آسمان کا وزن
 
یہ دیکھو کونوں سے کچھ گھاس آ گئی باہر
نمودِ زندگی روکے گا کیا چٹان کا وزن
 
اُٹھاؤ، دل سے اُٹھاؤ، کبھی جیو کھُل کر
نہیں کچھ ایسا بھی بے کار جسم و جان کا وزن
 
شکار شعر کے پنچھی کا کیا کروں یاور
کہ میرے تیر سے کم ہے مری کمان کا وزن
 
 

یاور ماجد

Transliteration

 
utaar phaiNka jo maiN na anaa ka, aan ka wazn
utar gayaa mire kandhoN se do jahaan ka wazn
 
bohot hai saql-e-zameeN aur mere par naazuk
saNbhaal paayeN ge kaise miri uRaan ka wazn
 
guzaari umr yuNhi shak ki dhool meN dab kar
panap na paaya yaqeeN, itna tha gumaan ka wazn
 
maiN aaj hooN zad-e-toofaaN, ghira hooN beech bhaNvar
aur us pe tauRe miri kashti, baadbaan ka wazn
 
ghuTan se kaise na barseN zameen par baadal
uThaaye baiThe haiN itna jo aasmaan ka wazn
 
yeh dekho konoN se kuchh ghaas aa gayi baahar
namood-e-zindagi roke ga kya chaTaan ka wazn
 
uThaao dil se uThaao, kabhi jiyo khul kar
naheeN kuchh aisa bhi bekaar jism-o-jaan ka wazn
 
shikaar shaer ke panchhi ka kya karooN yawar
keh mere teer se kam hai miri kamaan ka wazn

 

Yawar Maajed

  • 10 people like this.
    • یاور ماجد Thanks Ali, and Shareefa yes, I just unloaded it and put it on the floor, it was in my backpack 🙂
      October 23, 2009 at 8:17am
    • Khushbir Singh Shaad bahut khoob Yawar saheb
      October 23, 2009 at 9:15am
    • Muhammad Waris خوبصورت غزل ہے یاور صاحب، لاجواب
      October 23, 2009 at 10:04am
    • Rehana Qamar شکار شعر کے پنچھی کا کیا کروں یاور
      کہ میرے تیر سے کم ہے مری کمان کا وزن
      بہت عمدہ
      October 23, 2009 at 10:19am
    • بہت ہے ثقلِ زمیں اور میرے پر نازک
      سنبھال پائیں گے کیسے مری اُڑان کا وزن
      naya mazmoon hay kashish e sql per ash’aar umooman Gazal main nazar nahi atay. Maqta’ bohot accha hay. Teesray sh’er maiN mazmoon ki wus’at Gazal ke is sh’er ke liye kam …paR gaee.See More
      October 23, 2009 at 10:28am
    • Saud Usmani نءی بات کنے کا حوصلہ اور کو شش آپ کی شاعری کا جزو ہے اور یہ غزل بھی اس کا ثبوت ہے۔زمین وزنی تھی اوراسے سنبھالنامشکل۔۔داد قبول کریں جناب۔
      October 23, 2009 at 10:40am
    • یاور ماجد Thanks Shaad Sahib, Waris Sahib, Rehana Aapi, Majeed Sahib and Saud Sahib. I really appreciate your input and comments
      October 23, 2009 at 10:44am
    • Annie Akhter naheeN kuchh aisa bhi bekaar jism-o-jaan ka wazn
      suchi aur khari baat………. kash loug issay sumajh sakian.
      Yawar saheb. shukriya yaad aawri ka……… 🙂
      October 23, 2009 at 1:18pm
    • یاور ماجد Thanks Annie Ji.
      October 23, 2009 at 1:57pm
    • یاور ماجد Thanks Zainab, I hope you are feeling better now.
      October 23, 2009 at 3:30pm
    • Faiz Alam Babar jadeed rang e sukhan main bhot umda sher kahey hain hamarey yawar bhaii ney umda balkey bhot umda .thanks
      October 23, 2009 at 5:10pm
    • یاور ماجد Shukriya faiz sahib, aap ka husn-e-nazar hai. Pasand karne ka be had shukriya
      October 23, 2009 at 5:42pm
    • Zafar Khan یہ دیکھو کونوں سے کچھ گھاس آ گئی باہر
      نمودِ زندگی روکے گا کیا چٹان کا وزن
      واہ واہ۔ بہت اچھے یاور صاحب۔
      October 23, 2009 at 7:54pm
    • Kamran Haider Bukhari bohot hai saql-e-zameeN aur mere par naazuk
      saNbhaal paayeN ge kaise miri uRaan ka wazn

      It’s amazing… Really beautiful…

      October 24, 2009 at 12:34am
    • شکار شعر کے پنچھی کا کیا کروں یاور
      کہ میرے تیر سے کم ہے مری کمان کا وزن
      yawar tum bhi khoob admi ho…pahlay mushkil zameen tarashtay ho aphir usay khoob nibhatay bhi ho.saray shair achay hai magar maqtay ka jawab naheen…jawab naheen…bas …gumana ka wazn zara ajeeb lagaSee More
      October 24, 2009 at 1:45am
    • Amjad Shehzad یاور بھائی! اس وزن میں اور اس ردیف کے ساتھ اتنی خوب صورت غزل کہنے پر مبار باد قبول کیجئے۔ تمام اشعار لاجواب ہیں۔
      بہت ہے ثقلِ زمیں اور میرے پر نازک
      سنبھال پائیں گے کیسے مری اُڑان کا وزن
      کیا بات ہے اس شعر کی
      October 24, 2009 at 4:35am
    • Yawar Bhai aap nay 1985 ka samay yad kara diya:
      Ab isay too meray halqoom pa rakh day qatil
      Teray bas ka tau nahi’n hai teri shamsheer ka wazn
      Is qadar wazn tau masoom ka apana bhee nahi’n
      Hurmala jitna ziada hai teray teer k wazn
      …Mann k daryooza gar e baab e uloomam Akhtar
      Har ibarat say fazoo’n hai meri tehreer k wazn
      Mujhay, ye daikho kono’n…..wala she’r theek laga.Thanks for sharing.See More
      October 24, 2009 at 5:54am
    • یہ دیکھو کونوں سے کچھ گھاس آ گئی باہر
      نمودِ زندگی روکے گا کیا چٹان کا وزن

      بہت ہے ثقلِ زمیں اور میرے پر نازک
      سنبھال پائیں گے کیسے مری اُڑان کا وزن
      …yawar bhai bohat khoob ghazal kahi ha…..
      akhtar bhai mann ka daryoza gar e baab e uloomam akhtar……………subhan ALLAHSee More

      October 24, 2009 at 5:57am
    • Amjad Shehzad Akhtar Usman Khtar Usman hi hai…….ki abaat hai! Zabardast
      October 24, 2009 at 6:10am
    • طلعت جی، اتنے پیارے انداز سے داد دینے کا بہت ممنون ہوں، آپ کے تبصرے کا ہمیشہ انتظار رہتا ہے
      شکریہ ظفر صاحب اور کامران صاحب،
      وصی صاحب، آپ کی ذرہ نوازی ہے، ورنہ میں تو ایک عام سے جذبوں کا عام سا شاعر ہوں، بلکہ شاعر بھی کہاں ہوں، بس ایسے ہی ق…لم اٹھا کر کوششیں لگا رہتا ہوں،
      آپ کی گمان کے وزن والی بات کچھ سمجھ نہیں آئی، کیا آپ اس پر ذرا مزید لکھیں گے؟ میرا مطلب اس شعر میں سادہ سا تھا، کہ جیسا ڈِھل مِل یقین سا شخص ہوں میں، گمانوں کی دھول کے بوجھ کے نیچے ایسا دب کر رہ گیا کہ یقین کی کوئی کونپل کھل ہی بہیں پائی، اگر بات بن نہیں پائی تو اس شعر کو نکال دوں گا، اپنی رائے ضرور دیجئیے گا
      امجد صاحب، شعر پسند کرنے کا بہت شکریہ
      اختر بھائی، بہت خوبصورت اشعار لکھے آپ نے
      حماد صاحب، آپ کی محبت ہےSee More
      October 24, 2009 at 6:12am
    • Ali Zubair yawar majid sahb kiya achi or umda ghazal kahi hay.waah.matlay hi nay ghazal kay taiwer wzaih krdiye thay,,kay qaari isay jam kr parrhay..boht khoob yawar majid,,khush raho salamt raho
      October 24, 2009 at 7:18am
    • یاور ماجد سکریہ علی
      October 24, 2009 at 7:53am
    • Wasi Hasan Yawar…guman kay wazn wali baat zara faseeh naheen lagi…yani jahan ,chatan,kaman ka wazn to samajh main ata hay magar guman ka wazn …mari kamilmi ko moaaf kijyay ga..bus sekhnay kay liyay likhdiyatha magar apki wazahat bhi khoob hay…khudara shair ko mat nikaliyay
      October 25, 2009 at 12:17am
    • اتار پھينکا جو ميں نے انا کا، آن کا وزن
      اتر گيا مرے کندھوں سے دو جہان کا وزن

      بہت ہے ثقل _ زميں اور ميرے نازک پر
      سنبھال پائيں کيسے مری اڑان کا وزن

      ٭٭يہ ديکھو کونوں سے کچھ گھاس آگئ باہر
      نمود _ زندگی روکے گا کيا چٹان کا وزن

      ٭٭ شکار شعر کے پنچھی کا کيا کروں ياور
      کہ ميرے تير سے کم ہے مری کمان کا وزن

      انتہائ عمدہ کلام بھرپور داد قبول کيجيۓSee More

      October 25, 2009 at 1:40am
    • یاور ماجد شکریہ ذاکر صاحب
      وصی صاحب، آپ کی بات بجا ہے مگر کہیں کہیں اپنا ، شاعرانہ اجارہ
      (poetic license)
      بھی تو استعمال کرنے کی اجازت ہونی چاہئیے ناں
      🙂
      October 25, 2009 at 7:40am
    • Mohammad Ahsan یہ دیکھو کونوں سے کچھ گھاس آ گئی باہر /نمودِ زندگی روکے گا کیا چٹان کا وزن
      bahut hi khoobsoorat sher, waise to poori hi ghazal achchhi.
      October 25, 2009 at 7:59am
    • یاور ماجد نوازش ہے آپ کی احسان صاحب
      October 25, 2009 at 8:30am
    • Dilshad Nazmi ghazal bahot pasand aaei , aour sab se achi baat yeh hai ke wazn ki radeef nibh gai , keya khoob ghazal hai waah waah
      daad hazir hai
      October 25, 2009 at 8:46am
    • یاور ماجد شکریہ دلشاد صاحب، محبت ہے آپ کی
      October 25, 2009 at 8:48am
    • Wasi Hasan Yawar..wah wah….apnay tabiat khoosh ker di

      khoosh rahiyay

      October 25, 2009 at 10:50am
    • Tayuba Jamil bhut acha
      October 25, 2009 at 11:07am
    • یاور ماجد Thanks Tayuba Ji
      October 25, 2009 at 1:18pm
    • واہ یاور، بہت خوب۔ زمین حالانکہ مشکل تھی۔ لیکن کیا شعر نکالے ہیں، بلکہ خود اگ آئے ہیں شاید۔
      کہ
      یہ دیکھو کونوں سے کچھ گھاس آ گئی باہر
      نمودِ زندگی روکے گا کیا چٹان کا وزن
      اور

      گزاری عمر یونہی شک کی دُھول میں دب کر
      پنپ نہ پایا یقیں اِتنا تھا گُمان کا وزن

      شکار شعر کے پنچھی کا کیا کروں یاور
      کہ میرے تیر سے کم ہے مری کمان کا وزن
      ایک بار پھر دادSee More

      October 27, 2009 at 11:39am
    • یاور ماجد نوازش آپ کی اعجاز صاحب، آپ جیسے بزرگوں کی رہنمائی جو میسر ہے ، مجھے اور کیا چاہیئے
      October 27, 2009 at 11:46am
    • Irfan Sattar بھائ یاور سچی بات تو یہ ہے کہ عام استعداد رکھنے والا شاعر تواس زمین کا وزن سنبھالنے کی کوشش میں شعریت کو گرا بیٹھتا۔ آپ نے بہت تازہ مضامین، بہت خوبصورتی سے باندھے اور بظاہر خاصی پتھریلی زمین میں خوب پھول کھلائے۔ کیا کہنے۔ واہ ۔
      November 4, 2009 at 1:47am
    • یاور ماجد عرفان صاحب، آپ کا تبصرہ آج پڑھا، بہت نوازش آپ کی۔
      November 6, 2009 at 8:17am
    • moHtaram Yaavar saaHib!maashaa allah kis qadar
      bhaari bharkam aur saKht zamiin meN aap ne
      shairoN ki fasl kaasht kar Daali.is nauiyat ki
      zamiineN "izteraari”nahiiN”iKhtiyaari” hoti heN
      aur iKhtiyaari zamiiN likhne vaale se boaht mshaqqat
      …karaati he.mujhe Khushi he aap ne yeh mashaqqat
      kaam yaabi se anjaam di.meri jaanib se daad
      qubuul kiijiye.See More
      November 6, 2009 at 8:46am
    • یاور ماجد عزم صاحب، ایک بار پھر آپ کی محبت اور ہمت افزا الفاظ کا شکریہ، آپ کی رائے میرے لئے بہت محترم ہے
      November 6, 2009 at 9:21am
  • جواب دیں

    Fill in your details below or click an icon to log in:

    WordPress.com Logo

    آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

    Google photo

    آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

    Twitter picture

    آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

    Facebook photo

    آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

    Connecting to %s