کیوں لَو کسی چراغ کی بھی سینہ زن نہیں

Posted: 2009/08/26 by admin in اردو شاعری, غزل

دِن بھَر کی شورشوں کے دباؤ کے شور سے
شب کے لِباسِ حبس میں کوئی شکن نہیں
 
کیوں روشنی گروں کی زبانیں ہیں سوختہ
کیوں لَو کسی چراغ کی بھی سینہ زن نہیں
 
اندھے خلا کی کھائی میں گرتا ہی جاؤں میں
پیروں تلے زمیں نہیں سر پر گگن نہیں
 
اک نغمہ خامشی کا بنی جائے زندگی
اک رقص ہے کہ جس میں کوئی چھن چھنن نہیں

پلکیں بچھاؤ راہ، میں دل میں اسے سجاؤ
یہ زندگی ہے یہ تو کوئی پیرہ زن نہیں
 
یاور ہی اِک ہےعاجزو ناچیز و خاکسار
ورنہ یہاں پہ کون خدائے سُخن نہیں

یاور ماجد

 
din bhar ki shorishoN ke dabaao ke shor se
shab ke libaas-e-habs meN koyi shikan naheeN
 
kyooN raushni garoN ki zubaaneN haiN soKHta
kyooN lau kisi charaaGH ki bhi seena zan naheeN
 
andhe KHalaa ki khaayi meN girtaa hi jaaooN maiN
pairoN tale zameeN naheeN, sar par gagan naheeN
 
ik naGHma KHaamushi ka bani jaaye zindagi
ik raqs hai keh jis meN koyi chhan chhanan naheeN

palkeiN bichhaao raah meN, dil meN isay sajaao

ye zindagi hai ye to koyi peera zan naheeN
 
Yawar hi ik hai aajiz-o-naa cheez-o- KHaaksaar
varna yahaaN pe kaun KHudaaye suKHan naheeN

 

Yawar Maajed

Read this Ghazal on Facebook

  • 2 people like this.
    • waise tu sab hi sher apni jagah kamaal hain but I loved this one…

      andhi KHalaa ki khaayi meN girtaa hi jaaooN maiN
      pairoN tale zameeN naheeN, sar par gagan naheeN

      …Truly depicts a state when one is hopeless and helpless… Such pure emotions in poetry can never come without facing the life in its true form… Wonderful… !!!

      Kamaal ki sachai hai aap k aik aik sher mein… Jiase yeh likhhay nahi gaye, utray hain… Buht aala…See More

      October 6, 2009 at 12:03pm
    • شکریہ کامران بھائی، اس غزل کا پہلا شعر ۱۹۹۳ میں لکھا تھا، پھر یہ بیک برنر میں چلا گیا، کچھ دن پہلے پھر سے یاد آیا تو سوچا کہ کیوں نہ غزل مکمل کر لی جائے، مکمل تو ابھی بھی نہیں ہوئی لیکن دیکھیں، ممکن ہے اگلے دس پندرہ سالوں میں مطلع بھی لکھ …ہی لوں
      یہ آپ کا پیار ہے ورنہ میں اتنی زیادہ تعریف کا مستحق نہیں،

      جس شعر کا آپ نے حوالہ دیا، اسی طرح کا ایک اور شعر بھی پچھلے دنوں لکھا تھا، وہ کچھ ءیوں تھا

      میں لُڑھکتا ہی چلوں کون و مکاں کی کھائی میں
      ایسی گردش شش جہت کی ہے کہ گھٹتی ہی نہیں

      گو خیال تقریباً ایک ہی ہے مگر پیش کرنے کا انداز مختلف۔
      یاورSee More

      October 6, 2009 at 12:24pm
    • Gulnaz Kausar achi kawaish hay janab … pairoN talay zameeN nahi sar par gagan nahiN … wah
      October 6, 2009 at 12:34pm
    • Majeed Akhtar بہت اچھی غزل ہے یاور۔ مضامین کے برتاؤ میں آپ نے معمول کی روش سے ہٹ کر تازہ لہجہ پیدا کرنے کی کوشش کی ہے اور کامیاب رہے ہیں۔ تیسرے شعر کے آغاز میں اندھی خلا کی جگہ اندھے خلا کرلیں ۔ آخری شعر بہت اچھا ہے لیکن پہلی فرصت میں آپ بھی خدائے سخن بن جائیے ۔ فیس بک پر خاصی آزادی ہے اور کوئی روک ٹوک نہیں ہے ۔ ایک اچھی کاوش پر بہت سی داد۔ مطلع کیلئے دس پندرہ دن لے لیجئے دس پندرہ سال بہت زیادہ ہیں۔
      October 6, 2009 at 2:04pm
    • چلیں آج سے ہم بھی آپ کی اجازت سے خدائے سخن کی مسند سنبھال لیتے ہیں
      مستند ہے میرا فرمایا ہوا
      سارے عالم پر ہوں میں چھایا ہوا

      ادھر دوسری طرف ای ٹی بے چارہ آپ کے مشورے کا انتظار کرتے کرتے سوکھ گیا ہے بھائی کچھ کریں، پیرہ زن کہیں اسے ماضی کے ان…دھے کنوئیں میں نہ دھکیل دےSee More

      October 6, 2009 at 2:14pm
    • یاور ماجد اندھے خلا کی نشاندہی کرنے کا شکریہ مجید صاحب
      October 6, 2009 at 2:31pm
    • Gulnaz Kausar khala moanas hay ….
      October 6, 2009 at 3:45pm
    • Faiz Alam Babar wah yawar bhai kia umda ghazal hy tamaam ashaar pasand aaii lehjey ka tu jawab nahi wah saheb wahhhhh
      October 6, 2009 at 3:45pm
    • مجھے اساتذہ میں سے کسی کا کوئی اور ایسا شعر یاد نہیں آ رہا جس میں خلا کو مذکر یا مونث باندھا گیا ہو، میرا ذاتی خیال یہی تھا کہ خلا مونث ہوتی ہے، لیکن مجید صاحب نے مذکر کہا تو میں کیسے نہ مانتا۔ کیا آپ کے ذہن میں کوئی ایسی مثال ہے جہاں خلا… کو مذکر یا مونث باندھا کیا ہو؟

      اور فیض صاحب، پسندیدگی کا شکریہSee More

      October 6, 2009 at 4:13pm
    • یاور ماجد http://crulp.org/oud/ViewWord.aspx?refid=5253
      نمبر ۱ میں مذکر
      نمبر ۲ میں مونث،
      سو میرا خیال ہے کہ دونوں ہی طرح سے جائز ہے
      October 6, 2009 at 4:28pm
    • Gulnaz Kausar han ji kuch aisa hi confusion tha mujhay bhi aur bohat say logon ki opinion kay baad moanas par hi baat khatam howi thi
      October 6, 2009 at 5:29pm
    • Lekin yeh bhi to socheN na, jab kisi baRe adeeb ka intiqaal ho jaaye to log yeh naheeN kehte keh "un ke jaane se adab meN bohot baRi KHala paida ho gayi hai” balkeh aisi haalat meN KHala ko muzakkar hi baaNdha jaata hai.
      Ghar jaa kar farhang…-e-aasifiya meN dekhooN gaSee More
      October 6, 2009 at 5:34pm
    • Gulnaz Kausar hahahaha baat tau thek hay … i think phir donon tarah thek ho ga .. aap daikh lo phir mujhay bhi bata daina …
      October 6, 2009 at 5:35pm
    • Majeed Akhtar Gulnaz aap bhool gaeeN, Khala ke muzakkar par faisla hua tha.
      رات دل میں یقیں کی موت ہوئی
      اور جنازے میں بس خلا نکلا
      October 6, 2009 at 6:00pm
    • Majeed Akhtar یہ غزل اس خاکسار نے سحر انصاری،رضی اختر شوق، جون ایلیا اور سرشار صدیقی کی موجودگی میں ایک مختصر سی نشست میں پیش کی تھی۔ اگر خلا کو مؤنث باندھنا صحیح ہوتا تو ان بزرگوں میں سے کوئی نہ کوئی میری توجہ اس طرف ضرور دلاتا۔ فیس بک کے احباب۔ ذی قدر کیا کہتے ہیں بیچ اس مسئلے کے ۔ ۔
      October 6, 2009 at 6:04pm
    • جناب مجید صاحب، آپ کا فرمانا بالکل درست تھا، فرہنگِ آصفیہ بھی آپ والی بات ہی کہہ رہی ہے اور حضرت ناسخ بھی
      خلا ۔ ع۔ اسمِ مذکر ملا کا نقیض ۔ خالی قول ہے کہ خلا محال ہے، جو چیز ہے وہ کسی نہ کسی چیز سے پر ہے، اور کچھ نہیں تو اس میں ہوا ہی ہے…
      ہے یونہی ترکِ ہوا اس کو اگر اے فلسفی
      ثابت اپنے عالمِ دل میں خلا ہو جائے گا
      ناسخ
      سو جو لوگ اس کو مونث باندھتے ہیں وع ایک غلط العام ہے
      یاورSee More
      October 6, 2009 at 6:10pm
    • یاور ماجد شکریہ طلعت جی، بس دل کی بھڑاس ہے، نکال لیتے ہیں کبھی کبھی
      🙂
      October 6, 2009 at 8:06pm
    • اندھے خلا کی کھائی میں گرتا ہی جاؤں میں
      پیروں تلے زمیں نہیں سر پر گگن نہیں

      Subhaan Allah …

      …Aap ki Ghazal Mozoaati taur pay jis nizaam fiker k saath juRi hui hai woh zaat say zamaana tak pahila howa hai . Tamam ashaar main takhleq pazeer honay walay tajarbaat or waseee ter insani raviyuN ki tarjumani ker rahay hain..

      Aap k liye bohat c duaain ….Jeetay rahain ap hazaaroN barasSee More

      October 6, 2009 at 11:07pm
    • سبحان اللہ، اچھی غزل ہے یاور۔ (صاحب ہٹا دیتا ہوں، ماجد بھائی کے تعلق سے)۔ اس وقت تو آپ نے اندھی خلا کر ہی دیا ہے، لیکن یہاں استعمال کے مطابق اندھے اور اندھی دونوں درست تھے۔
      اندھے خلا کی کھائی (اندھے خلا مذکر کے لئے)
      خلا کی اندھی کھائی (اندھی …کھائی۔ مؤنث کے لئے
      خلا ویسے یقیناً مذکر ہے۔
      ویسے اندھے خلا میں بات واضح تو ہو جاتی ہےل لیکن مجھے نہ جانے کیوں صوتی اعتبار سے اندھی ہی بہتر لگ رہا ہے۔See More
      October 7, 2009 at 12:42am
    • Arif Imam کیا کہنا، بہت عمدہ غزل ہے، صرف مطلع کا خلا محسوس ہو رہا ہے۔
      October 7, 2009 at 1:30am
    • Muhammad Waris بہت اچھی غزل ہے یاور صاحب، کیا کہنے۔ سبھی اشعار اچھے ہیں، لاجواب
      October 7, 2009 at 1:56am
    • Rehana Qamar tamam ghazal bohat khoobsoorat hai khaas taor per ik naghma khaamushi ka bani jaaye zindagi ik rags hai keh jis men koyi chhaan chanan nahaeen bohat achha laga
      October 7, 2009 at 3:06am
    • یاور ماجد کاشف صاحب، اعجاز صاحب، عارف صاحب، وارث صاحب اور ریحانہ آپی، آپ سب کاغزل پسند کرنے کا اور اپنی رائے دینے کا بہت شکریہ
      ریحانہ آپی، خصوصاً آپ کا کیونکہ یہ آٓپ کا میری کسی بھی چیز پر پہلا تبصرہ ہے
      آپ سب خوش رہیں
      October 7, 2009 at 6:03am
    • Aazim Kohli اک نغمہ خامشی کا بنی جائے زندگی
      اک رقص ہے کہ جس میں کوئی چھن چھنن نہیں

      bahut achhaa hai yaawar sahib….khoob hai…..jeetey raho

      October 7, 2009 at 8:52am
    • یاور ماجد شکریہ عازم صاحب، آپ کا میرے صفحے پر آنا اور اس پر تبصرہ بھی کرنا میرے لئے اعزاز سے کم نہیں
      October 7, 2009 at 8:55am
    • Masood Quazi Young Man’s poetry ,with classic touch
      October 9, 2009 at 7:27am
    • یاور ماجد Thanks Masood saahib, its an honor to have you in my friends circle, looking forward to learn a lot from you.
      October 9, 2009 at 7:45am
    • Muhammad Khawar Ghazal shaandaar hai.

      abaid SaHeb ki baat qaabil e ghor hai.

      andhay khala ki nisbat andhi khaaye kehnaa zydaa behtar lagtaa hai

      October 9, 2009 at 9:02am
    • یاور ماجد شکریہ خاور صاحب، میں سوچ رہا ہوں کہ اس اندھے پن کو نکال ہی دوں اور صرف "طرفہ خلا” لکھ دوں
      طُرفہ خلا کی کھائی میں گرتا ہی جاؤں میں
      پیروں تلے زمیں نہیں سر پر گگن نہیں
      October 9, 2009 at 9:05am
    • Muhammad Khawar aor agar jaise lagayaa jaa-ye to

      jaise khalaa ki khai meN…………

      October 9, 2009 at 9:07am
    • Muhammad Khawar waise ye sach hai (mere khyaal meN ) ke agar andhay ko nikal kar miSra keheN ge to zydaa faSeeH ho ga
      October 9, 2009 at 9:07am
    • یاور ماجد اتنے لوگوں کی رائے کے بعد سوچنا تو پڑے گا
      October 9, 2009 at 9:11am
    • Qudsia Nadeem Laly tammam mutanad shuora ki umda raye bhi aap ki umda ghazal ky sath naseeb hui,bhoot khoob….
      December 21, 2009 at 1:35pm
  • جواب دیں

    Fill in your details below or click an icon to log in:

    WordPress.com Logo

    آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

    Google photo

    آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

    Twitter picture

    آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

    Facebook photo

    آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

    Connecting to %s